ابھی لکھیں تو کیا لکھیں؟

Posted on 12/07/2006. Filed under: شعروادب |

ہر اک جانب اداسی ہے
ابھی سوچیں تو کیا سوچیں؟

ہر اک سو، ہو کا عالم ہے
ابھی بولیں تو کیا بولیں؟

 

ہر اک انسان پتھر ہے
ابھی دھڑکیں تو کیا دھڑکیں؟

 

فضا پر نیند طاری ہے
ابھی جاگیں تو کیا جاگیں؟

 

ہر اک مقتل کی شہِ رگ میں
لہو کی لہر جاری ہے

 

ابھی دیکھیں تو کیا دیکھیں؟
ہر اک انسان کا سایہ

 

ابھی مٹی پہ بھاری ہے
ابھی لکھیں تو کیا لکھیں؟
محسن نقوی

Advertisements

Make a Comment

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Google photo

آپ اپنے Google اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Connecting to %s

Liked it here?
Why not try sites on the blogroll...

%d bloggers like this: