تمھاری یاد

Posted on 03/03/2007. Filed under: شعروادب |

پرندے لوٹتےدیکھے، تو یہ دھوکا ہوا مجھ کو
کہ شاید جستجو میری،
یا کوئی آرزو میری،
ترے در سے پلٹ آئی
مجھے تنہا بیاباں سےگزرتےلگ رہا ہے ڈر
جدائی کےشجر کی اب حفاظت بس سے باہر ہے
یہ پانی آنکھ سےگرتا،
اگر سیلاب ہو جائے
یہ پیلی دھوپ، مہکی رُت،
سراب و خواب ہوجائے
تو پھر اس تشنہ روش میں ،
پھوٹتی کلیوں کےسب نغمے
سنانےکوترستی خواہشیں، ناکام ٹہریں گی
مثالِ رفتگاں ، جاتے ہوئے مہکے ہوئے لمحے
خزاں کے زرد پتوں کے لئے ہی قرض لےآؤ
مسلسل جو اُداسی پر اداسی،
یوں برستی ہے
کہیں مرجھا نہ دے، سرسبز اس شاخِ محبت کو
تعلق کی بھی میری جان ، اک میعاد ہوتی ہے
پھر اس کےبعد،
ہر بندھن سےجان آزاد ہوتی ہے
خزاں کی جیت سے پہلی
ذرا یہ دھیان کرلینا
کہ سینےمیں، مرا دل ہے۔۔۔
فقط اِک پھول !!!

تمہاری یاد
سونی سونی، خالی خالی
اک سرمئی حویلی میں
راگ۔۔۔
ستار نےچھیڑا ہے
اک جلتی مشعل لےکر ۔شب ۔ ملنےکو آئی ہے
فانوسوں کی چھن چھن ،چھن میں
جھلمل جھلمل ،چاندنی پر
رقص ، ہوا کا جاری ہے
سوکھی چنبیلی کی اک بیل
خستہ ستون سےلپٹی ہے
اور، تھرکتی لَو کا رنگ۔لےکر لاکھوں ننھےدیپ
دل کےطاق پہ جل اُٹھےہیں
آئی جیسے۔۔۔
تمہاری یاد۔۔۔!!!

فرزانہ نیناں

Make a Comment

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Google photo

آپ اپنے Google اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Connecting to %s

One Response to “تمھاری یاد”

RSS Feed for Pakistani Comments RSS Feed


Where's The Comment Form?

Liked it here?
Why not try sites on the blogroll...

%d bloggers like this: