پاکستانی کا خواب

Posted on 04/06/2007. Filed under: پاکستان, شعروادب |

کیا ایسا جہاں ممکن ہے؟
جہاں فصلین سب سانجھی ہوں
جہاں خوشیاں سب کی سانجھی ہوں
جہاں غم کو بانٹا جاتا ہو
انصاف کو جانچا جاتا ہو
مزدور کو اجرت ملتی ہو
اظہار کو جرات ملتی ہو
تعلیم سب کو یکساں ہو
ایک دور خوشی کا رقصاں ہو
جہاں وڈیرا ہو نہ سردار ہو
وحشت کا کاروبار نہ ہو
ہاں کیا ایسا جہاں ممکن ہے؟
ہاتھوں میں ہاتھ ہمارا ہو
انصاف ہمارا نعرہ ہو
آؤ ظلم سے ایسے ٹکرائیں
ہتھارے سارے مٹ جائیں
ہمیں جھکنا نہیں، ہمیں بکنا نہیں
سب ظلم کے ٹھکیداروں سے
سب امن کے دعویداروں سے
ہم حق اپنا منوائیں گے
ہم امن کا دیس بسائیں گے
ہاں کیا ایسا جہاں ممکن ہے؟

Advertisements

Make a Comment

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Google photo

آپ اپنے Google اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Connecting to %s

Liked it here?
Why not try sites on the blogroll...

%d bloggers like this: