ایسے قائد کی ضرورت اب بھی ہے

Posted on 09/11/2007. Filed under: شعروادب |

کل بھی برپا شورشیں باطل نے کیں
ذہن کافر میں شرارت اب بھی ہے
غیرتِ اسلام زندہ کل بھی تھی
خونِ مسلم میں حرارت اب بھی ہے
تھے رواں کل بھی جہادی قافلے
جاری یہ خاطرِ مدارت اب بھی ہے
جان کے نظرانے دیئے تھے کل بھی
زندہ یہ شوق شہادت اب بھی ہے
کلمہ توحید کل بھی سچ تھا
موقفِ حق میں صداقت اب بھی ہے
زندگی تیری امانت کل بھی تھی
زندگی تیری امانت اب بھی ہے
بت شکن ماضی میں بھی تھا مسلمان
کافروں کو یہ شکایت اب بھی ہے
منافقوں نے کل بھی دھوکے دیئے
ان سے صلح میں قباحت اب بھی ہے
کل کا فرعون غرق دریا ہو گیا
زندہ موسٰی کی جماعت اب بھی ہے
دنیا بھر کے آئمہ چلتے بنے
اور محمد صلی اللہ علیہ وسلم کی امامت اب بھی ہے
کل لکھا تاریخ میں خالد جسے
وہ شجاعت کی علامت اب بھی ہے
ابن قاسم کی ضرورت کل بھی تھی
لاکھوں طارق ہوں، ضرورت اب بھی ہے
پھونک دیں کل بھی ہم نے کشتیاں
زندہ یہ اپنی روایت اب بھی ہے
رحمتیں کل بھی اتریں بدر میں
اور قائم یہ اعانت اب بھی ہے
کل بھی تھے یہ رحمتوں کے سلسلے
قائم اللہ کی سخاوت اب بھی ہے
کل بھی زندہ تھے مگر توحید پر
لب پہ اپنے یہ عبارت اب بھی ہے
سنت نبوی جس کی شان ہو
اسوہ فاروق جس کی شان ہو
ایسے قائد کی ضرورت کل بھی تھی
ایسے قائد کی ضرورت اب بھی ہے

شاعر ۔ نامعلوم

Advertisements

Make a Comment

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Google photo

آپ اپنے Google اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Connecting to %s

One Response to “ایسے قائد کی ضرورت اب بھی ہے”

RSS Feed for Pakistani Comments RSS Feed


Where's The Comment Form?

Liked it here?
Why not try sites on the blogroll...

%d bloggers like this: