صبحِ نوید

Posted on 31/12/2007. Filed under: شعروادب | ٹيگز:, , , |

ہر روز اِک نئی اُمنگ لئے پھرتے ہیں
ہر شام اُداسیاں اور مایوسیاں لئے پھرتے ہیں
یونہی سال دورِ اختتام پہ
نیا سال آن پہنچا
٢٠٠٧ء زوال سے عروج کی جانب اِک سفر
آغاز عید تھی، اختتام بھی عید رہی
رواں برس قربانی کی تعلیم تھا
سالِ گزشتہ کا بیڑہ طوفانوں سے نبردآزما تھا
منافقت کی تکمیل سے بھرپور
نئی جدوجہد عملی ناکام کوشش لئے
٢٠٠٨ء آغاز پہ آن پہنچا
اقتدار کے معنی لئے
بربادی سے بھرپور
سورج کو سلام کرنے والوں کا سال
٣١ دسمبر خاموشی بھی، آخری سانسوں کے لمحات بھی
مگر بڑا ہی اہم
یوم احتساب ہوا تو!
مستقبل کی اِک نوید ہو گا ۔۔۔
دُعا کیجیئے!
اقتدار کا یہ سال ۔۔۔
نئے سورج کا اِک نیا طلوع ہو!
کیا خوبصورت قدرت کا کرشمہ ہوا
محرم و جنوری اس نئی راہ کا افتتاح ۔۔۔۔
اے اللہ ہم پہ اپنا رحم کیجیو!
ہمارے اعمال صراط مستقیم پہ رکھیئو!
ہم پہ اپنا کرم فرما دے!
ہمیں باعمل اچھا اور نیک انسان بنا دے!
سال مبارک

(فرخ نور)

Make a Comment

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Google photo

آپ اپنے Google اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Connecting to %s

Liked it here?
Why not try sites on the blogroll...

%d bloggers like this: