Archive for نومبر, 2008

مشرف، زرداری، ڈوگر

Posted on 29/11/2008. Filed under: پاکستان, طنز و مزاح |

Read Full Post | Make a Comment ( 1 so far )

حکمرانوں کو نہیں عوام کو جگائیں

Posted on 28/11/2008. Filed under: پاکستان, سیاست |

لکھنا تو میں شریف، تاثیر کی لڑائی پر چاہتا تھا جو روز بروز بڑھتی چلی جا رہی ہے مگر اپنے بلاگ کی ایک تحریر بنام اردو بلاگرز نے میری سوچ کا رخ ایک بار پھر عوام کی طرف موڑ دیا۔ پاکستانی عوام کے اندر چھپی بصیرت پر کسی کو کوئی شک نہیں، حکمران طبقہ پاکستانی عوام کو جس قدر ‘کملے‘ سمجھتے ہیں وہ اسی قدر سیانے ہیں بس مشکل یہ ہے کہ انہیں نظام کے شکنجے میں بُری طرح جکڑ دیا گیا ہے۔ ان کا حال پنجرے میں پھڑ پھڑاتے پرندے جیسا ہے جس کے پر بھی سلامت ہیں اور اڑان کی خواہش بھی دل میں ہے لیکن جسے اڑنے کی اجازت نہیں دی جا رہی۔
اس وقت تمام بلاگرز کے قلم موتی بکھیر رہے ہیں مجھے ان کے الفاظ سے مکمل اتفاق ہے۔ ان سے ایک شکایت بھی ہے اور وہ شکایت یہ ہے کہ آپ اکثر حمکران ٹولے کو جھنجھوڑتے نظر آتے ہیں، سارے گلے شکوے بھی اسی سے کرتے ہیں، لیکن افسوس ہمارے حکمران طبقے میں عمل کا فقدان ہے اور ان کے اندر کا انسان مر چکا ہے، یقیناََ مردے کبھی واپس نہیں آتے بلکہ وہ تو جاگنے کے لئے صرف قیامت کے منتظر ہوتے ہیں۔ آپ ان مردوں کو جگانے کے لئے اپنے قلم کی سیاہی کیوں ضائع کر رہے ہیں۔ آپ حکمرانوں کی بجائے عوام کو جھنجھوڑیں، انہیں جگائیں، کیونکہ عوام کے اندر ابھی بیدار ہونے کی صلاحیت موجود ہے۔ صرف ان کے لاغر جسموں میں کرنٹ دوڑانے کی ضرورت ہے۔ آپ حکمرانوں سے نہ کہیں کہ وہ عوام کو ان کا حق دیں، ایسا ممکن نہیں ہے، آپ عوام کو یہ احساس دلائیں کہ وہ اپنے حقوق کس طرح حاصل کر سکتے ہیں۔ اپنے حقوق کے لئے انہیں کیا کیا قربانیاں دینی ہوں گی اور ساتھ ساتھ عوام کو اس بارے میں آگاہ کرتے رہیں کہ حکمران طبقے کے چور دروازے کون کون سے ہیں، کہاں اور کیسے یہ بچ نکل جاتے ہیں عین ممکن ہے عوام کو جھنجھوڑنے سے ان کی نیند ٹوٹ جائے اور اکسٹھ سالہ کچلے اور پسے ہوئے غریب عوام اپنے حقوق کی خاطر غاصبوں کو گریبان سے پکڑ لیں اور ان سے اکسٹھ سالوں کا حساب برابر کر دیں۔ اگر عوام جاگ گئے اور ان کے اندر مسلمانوں کے درخشاں ماضی کا تسلسل، احساس ذمہ داری اور حقوق کا شعور پیدا ہو گیا تو میں آپ کو یقین دلاتا ہوں کہ حکمران طبقہ خودبخود سیدھا ہو جائے گا۔ لیکن کسی مصلحت یا خوف کی وجہ سے آپ ایسا نہیں کر سکتے تو پھر اپنے قلم سے مستقبل کے سنہرے خوابوں کی ایسی لوریاں سنائیں کہ جن کے ذریعے انہیں غفلت کی نیند آ جائے اور ان کی اس غفلت کے دروان ظالمانہ نظام کے پروردہ چھوٹے بڑے حکام ان کے منہ سے آخری نوالہ بھی چھین لیں۔ جب بھوک کی اذیت سے یہ غافل عوام یکدم جاگیں گے، تو ایسے وحشی بن چکے ہوں گے جن پر کنٹرول کرنا ناممکن ہوتا ہے۔ پھر وہ انقلاب برپا ہو گا جس کے بارے میں سن سن کر عوام کے کان پک گئے ہیں۔

Read Full Post | Make a Comment ( 3 so far )

پاک بھارت ہیکرز پھر سرگرم

Posted on 26/11/2008. Filed under: ٹیکنالوجی, پاکستان |

بھارت اور پاکستان کے ہیکرز ایک بار پھر سرگرم ہوگئے ہیں اور ایک دوسرے کی ویب سائٹس جس میں بعض حکومتی ویب سائٹس بھی شامل ہیں، انہیں ہیک کیا جا رہا ہے۔

چند روز قبل مبینہ طور پر ہندوستانی ہیکرز نے پاکستان کی آئل اینڈ گیس ریگولیٹری اتھارٹی یعنی اوگرا سمیت بعض ویب سائٹس کو ہیک کر لیا تھا۔

اوگرا کے ایک ترجمان محمد اسد سے جب ان کی سائٹ ہیک ہونے کے بارے میں دریافت کیا تو انہوں نےاس کی تصدیق کی اور بتایا کہ سترہ نومبر کی رات کو کچھ دیر کے لیے ایسا ہوا تھا۔ تاہم انہوں نے کہا کہ ان کے متعلقہ شعبہ نے فوری طور پر کارروائی کی اور معاملہ ٹھیک کر دیا۔

ان سے جب پوچھا کہ انہوں نے اس بارے میں دفتر خارجہ یا محمکہ داخلہ کو شکایت کی تو انہوں نے کہا کہ ایسی کوئی بات ان کے علم میں نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ یہ بات اب پرانی ہوچکی ہے۔

ہندوستان کے ایچ ایم جی ڈی ٹی آندھرا ہیکرز نامی گروپ نے ایک پاکستانی ویب سائٹ کو ہیک کرنے کے بعد ایک دھمکی آمیز پیغام بھی چھوڑا۔ پیغام میں کہا گیا ہے کہ ’پیارے پاکیز انڈین ہیکرز کا راج ہے۔ جائیں اور سوجائیں کہیں۔۔ ہم مار دیں گے۔‘

اس ویب سائٹ پر انہوں نے یہ بھی لکھا ہے کہ ’ہندوستان زندہ باد ایچ ایم جی ڈی ٹی آندھرا ہیکرز۔ اس گروپ نے رابطے کے لیے اپنا ای میل بھی چھوڑا ہے۔

اس واقعہ کے بعد پاکستان سائبر آرمی نامی ہیکرز نے ہندوستان کی بعض ویب سائٹس ہیک کرنا شروع کردی ہیں، جس میں اطلاعات کے مطابق بھارت کی ’آئل اینڈ گیس کارپوریشن لمیٹڈ‘ کی سائٹ بھی شامل ہے۔ ایک بھارتی ویب سائٹ کو ہیک کرنے کے بعد مبینہ طور پر پاکستانی ہیکرز نے ایک جوابی پیغام چھوڑا کہ ’ ہم سو ضرور رہے ہیں لیکن مرے نہیں ہیں۔ اب نتائج بھگتیں۔‘ ۔۔۔۔ مزید یہاں

Read Full Post | Make a Comment ( 2 so far )

قوم کی خاص بیٹی

Posted on 26/11/2008. Filed under: پاکستان |

روزنامہ جنگ کے مطابق پاکستان میں چیف جسٹس کی بیٹی کے انٹر میڈیٹ کے نمبربڑھائے جانے کے واقعہ کے پس منظر میں بھارت کے ایک وزیر اعلیٰ کے اپنی بیٹی کے ساتھ رویہ کا واقعہ سامنے آیا ہے جس میں وزیر اعلیٰ نے اپنی پیاری بیٹی کو امتحان میں زیادہ نمبر دلانے کے لئے کسی قسم کی سفارش کرنا گوارا نہیں کیا۔بھارتی اخبارات میں یہ خبر شائع بھی ہوئی تھی۔ بھارت کے سابق وزیر اعظم مرار جی ڈیسائی جب مہاراشٹر کے وزیر اعلیٰ تھے تو ان کی بیٹی جو ممبئی میں میڈیکل کالج کی طالبہ تھی کالج کی سطح پر ہونیوالے ایم بی بی ایس تھرڈ ایئر کے ایک پرچہ میں اسے کم نمبر ملنے کا خدشہ تھا۔ اس کے خیال میں پرچہ زیادہ اچھا نہیں ہوا تھا جس کا ذکر اس نے باپ سے کیا اور کہا کہ وزیر اعلیٰ ہونے کے سبب آپ یونیورسٹی کے چانسلر ہیں اور صوبے کے تمام کالج آپ کے انڈر میں ہیں۔ میڈیکل کالج کا پرنسل آپ کا دوست بھی ہے اور وہ ہمارے گھر بھی آتا ہے آپ کا صرف کہنا ہی کافی ہوگا تھرڈ ایئر کا امتحان لوکل سطح کا ہے پرنسپل کے اپنے ہاتھ میں ہے یہ کام آسانی سے ہوجائے گا مگر باپ نے کسی قسم کی مدد کرنے سے صاف انکار کردیا اور کہا کہ میں اپنی بیٹی کے لئے سفارش کرکے کالج کے دیگر طلبہ کے ساتھ ناانصافی نہیں کرسکتا۔

اعلی عدالتی فیصلوں اور بورڈ کے قواعد کی خلاف ورزی، چیف جسٹس عبدالحمید ڈوگر کی بیٹی کواضافی نمبر دلوائے گئے۔
فرح حمید ڈوگر کو نئے نمبروں کی بنیاد پر میڈیکل کالج میں داخلہ مل گیا۔
پرچوں کی ری مارکنگ سپریم کورٹ نے ختم کردی،نمبر نہیں بڑھائے جاسکتے، کنٹرولر لاہور بورڈ
چیف جسٹس ڈوگر کی بیٹی کوخلاف قواعد اضافی نمبردلوانے کی تحقیقات شروع
اضافی نمبر دینا زیادتی ہے، رکن پنجاب اسمبلی

چیف جسٹس مستعفی ہو جائیں

Read Full Post | Make a Comment ( 1 so far )

بجلی چور

Posted on 19/11/2008. Filed under: پاکستان |

Read Full Post | Make a Comment ( 1 so far )

پاکستان کے خلاف سی آئی اے کی کھلی جنگ

Posted on 18/11/2008. Filed under: پاکستان |

Read Full Post | Make a Comment ( 2 so far )

دُعا

Posted on 13/11/2008. Filed under: اسلام, تعلیم, رسم و رواج, عشق ومعرفت |

اے اللہ   ہمارے گناہ معاف فرما دے۔
اے اللہ   ہماری خطاؤں کو درگذر فرما۔
اے اللہ   ہمیں نیکیوں کی توفیق عطا فرما، ہمارے چھپے اور کھلے گناہ، اگلے پچھلے گناہ معاف فرما، بے شک تیری معافی بہت بڑی ہے۔
اے اللہ   اپنی رحمت کے دامن میں چھپا لے۔
اے اللہ   ہمیں رات اور دن کے فتنوں سے بچا۔
اے اللہ   ہمیں جنوں اور انسانوں کے فتنوں سے بچا۔
اے اللہ   زندگی اور موت کے فتنوں سے بچا۔
اے اللہ   ہماری آہ زاری سن لے۔
اے اللہ   ہماری جسمانی اور روحانی بیماریوں کو صحت عطا فرما۔
اے اللہ   ہمیں جسمانی طاقت اور قوت عطا فرما۔
اے اللہ   ہم کو مصیبت سے نجات عطا فرما۔
اے اللہ   ہمیں حضرت آدم علیہ السلام جیسی توبہ نصیب فرما۔
اے اللہ   حضرت یعقوب علیہ السلام جیسی گریہ و زاری نصیب فرما۔
اے اللہ   ہمیں ابراہیم علیہ السلام جیسی دوستی نصیب فرما۔
اے اللہ   ہمیں ایوب علیہ السلام جیسا صبر نصیب فرما۔
اے اللہ   ہمیں داؤد علیہ السلام جیسا سجدہِ شکر نصیب فرما۔
اے اللہ   رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم جیسے عمل نصیب فرما۔
اے اللہ   حضرت ابوبکر صدیق رضی اللہ عنہ جیسا صدقہ نصیب فرما۔
اے اللہ   عمر رضی اللہ عنہ جیسا جذبہ نصیب فرما۔
اے اللہ   حضرت عثمان غنی رضی اللہ عنہ جیسا غنا عطا فرما اور شرم و حیا نصیب فرما۔
اے اللہ   حضرت علی رضی اللہ عنہ جیسی شجاعت و بہادری نصیب فرما۔
اے اللہ   آئمہ دین جیسی خدمتِ اسلام نصیب فرما
اے اللہ   ہمیں خلفائے راشدین جیسی بھلائیاں نصیب کر، ہمیں پیغمبری زندگی اور پیغمبری موت تحفہ بنا کر بھیج۔
اے اللہ   ہمیں موت تحفہ بنا کر بھیج، ہماری موت کو رحمت بنانا زحمت نہ بنانا۔
اے اللہ   ہماری قبروں کو جنت کے باغیچوں میں سے ایک باغیچہ بنانا۔
اے اللہ   ہمیں ایمان اور علم کی دولت سے مالامال کر دے۔
اے اللہ   تمام بے نمازیوں کو نمازی بنا دے۔
اے اللہ   بے روزگار کو رزقِ حلال عطا فرما۔
اے اللہ   گمراہوں کو راہ پر لے آ۔
اے اللہ   مفلس کو غنی کر دے۔
اے اللہ   مسلمانوں کو حلال روزی نصیب فرما۔
اے اللہ   بے اولادوں کو نیک اور صالح اولاد نصیب فرما۔
اے اللہ   جو اولاد سے گھبرا گئے ہیں انہیں معاف فرما دے۔
اے اللہ   بدکردار کے کردار کو درست فرما دے۔
اے اللہ   بد اخلاق کو مکرم الاخلاق فرما دے۔
اے اللہ   سلامتی والا دل، ذکر والی زبان اور رونے والی آنکھیں نصیب فرما دے۔
اے اللہ   ہمیں دین و دنیا کی عزت نصیب فرما۔
اے اللہ   ماں باپ کے نافرمانوں کو ان کا فرمابردار فرما دے۔
اے اللہ   بے چینوں کو چین عطا فرما، اجڑے ہوئے گھروں کو آباد کر دے اور جن گھروں میں نااتقافی ہے انکو اتفاق کی دولت سے مالامال کر دے۔
اے اللہ   ہمارے بچوں کو پاک دامنی عطا فرما اور انہیں زندگی کا نیک ساتھی نصیب فرما۔
اے اللہ   پاکستان کی حفاظت فرما اور اسے دشمنوں اور اپنوں کی چیرہ دستیوں سے محفوط رکھ۔
اے اللہ   ہمارے حکمرانوں کو حقائق جاننے، سمجھنے اور اس کی روشنی میں صحیح فیصلہ کرنے کی توفیق عطا فرما۔
اے اللہ   عالم اسلام میں اتحاد و اتقاق عطا فرما۔
اے اللہ   عالم اسلام کے حکمرانوں کے ایک دوسرے پر انحصار کرنے کی قوتِ فیصلہ عطا فرما۔
اے اللہ   ہماری قبروں کو جہنم کا گڑھا نہ بنا۔
اے اللہ   منکرِ نکیر کر سوالات کے وقت ہمیں ثابت قدم رکھنا۔
اے اللہ   ہماری زندگی اور موت کے بعد قرآن کو ہمارا مونس و غمگسار بنا دے۔
اے اللہ   ہمارے اعمال نامے ہمارے داہنے ہاتھ میں دینا۔
اے اللہ   ترازو کا پلڑا نیکیوں سے وزنی کرنا۔
اے اللہ   ہمارے چہروں کو قیامت کے دن چمکتا رکھنا۔
اے اللہ   پُل صراط ہمارے آسان فرما۔
اے اللہ   ہم پر اپنی رحمتوں اور کرموں کی بارش کر دے۔
اے اللہ   ہمیں جہنم سے بچا کر جنت الفردوس نصیب فرما۔
اے اللہ   ساقیِ کوثر صلی اللہ علیہ وسلم کے ہاتھوں سے حوض کوثر سے پانی پلانا۔
اے اللہ   تو سراپا عطا ہی عطا ہے مگر ہمیں مانگنے کا سلیقہ نہیں۔
اے اللہ   ان ٹوٹے پھوٹے لفظوں کو اپنی بارگاہ میں شرف قبولیت عطا فرما۔

Read Full Post | Make a Comment ( 3 so far )

تمنا

Posted on 12/11/2008. Filed under: شعروادب |

تمنا نے شوق کے آنچل سے جھانک کر پوچھا!
‘‘میں کب پوری ہوں گی‘‘
زندگی بولی ‘‘جو پوری ہو جائے وہ تمنا کہاں؟‘‘
‘‘تب میرے جنم کا مطلب کیا؟‘‘ تمنا گھبرائی۔
‘‘یہی کہ زندہ رہو اور دوسروں کو زندہ رہنا سکھاؤ‘‘
زندگی نے جواب دیا۔
کیا خود ناآسودہ اور نامکمل رہ کر؟
تمنا نے مایوسی سے پوچھا
زندگی نے کہا!
‘‘ہاں! اصل تکمیل وہی ہے جو دوسروں کو مکمل کر دے۔‘‘

Read Full Post | Make a Comment ( 2 so far )

ایک وزیر کتنے میں پڑتا ہے؟

Posted on 11/11/2008. Filed under: پاکستان |

پاکستان اس وقت بھیک مانگنے کے ‘مشن‘ پر ہے جس کے لئے اسے نیویارک، ریاض اور ابوظہبی کے طویل سفر کرنے پڑ رہے ہیں تو دوسری طرف وزیروں کے اللے تللے اور اس پہ مزید ٤٠ نئے وزراء کا بوجھ، حکومت پہلے ہی اپنی آمدنی سے چھے سو ارب روپے زائد خرچ کر رہی ہے اوپر ٤٠ نئے وزیر اب تیرا کیا ہو کالیا والی سٹوری شروع ہوا چاہتی ہے۔
حکومت کو پہلے ہی دو ارپ روپے یومیہ نقصان ہو رہا ہے اور نقصان میں مزید اضافے کے لئے کابینہ کے ارکان کی تعداد ٥٥ کر لی گئی ہے اس کے ساتھ ساتھ درجن بھر عمومی سفیر، مشیر اور وزیر کے برابر دوسرے عہدے دار۔
ایک وزیر پر کتنا خرچ آتا ہے؟
یہ ایک ایسا سوال ہے جس کا صحیح جواب نہیں دیا جا سکتا ہے کیونکہ ایک وزیر کو ملنی والی تنخواہ کے ساتھ الاؤنس، مالی فوائد، حقوق و استحقاق اور بہت سی رعائتیں شامل ہیں۔ جن میں سفری اخراجات، ذاتی ملازمین کے سفری اخراجات، گھریلو اشیاء کی ٹرانسپورٹ اخراجات، رکھ رکھاؤ اخراجات، وزیر اور اس کی اہلیہ کے لئے بزنس کلاس ہوائی ٹکٹ، بیرون ملک دورے کے لئے الاؤنس، غیر محدود طبی سہولہات، پولیس کا حفاظتی دستہ، ایندھن کے اخراجات، سیکورٹی، ذاتی سٹاف، دفتری سٹاف، یوٹیلٹی اخراجات، تفریح الاؤنس، ٹیلی فون اور موبائل کی سہولیات وغیرہ شامل ہیں۔
ان سہولیات سے ہمیشہ ناجائز فائدہ اٹھایا گیا، ایک روپے کے بل کو لاکھ روپے بنا کر کلیم کیا گیا۔ پچھلے دنوں آڈیٹر جنرل آفس نے جے یو آئی (ف) کے ایک مرد رکن اسمبلی کا میڈیکل بل پکڑا جس میں حمل ٹیسٹ کرانے کے اخراجات طلب کئے گئے تھے، یہ تو ایک مثال ہے، ایسی مثالیں روز اخبارات کی زینت بنتی رہتی ہیں۔
ایک اندازے کے مطابق موجودہ سفیروں، مشیروں اور دیگر عہدیداروں پر آئندہ آنے والے بارہ ماہ کے دوران پانچ سو کروڑ روپے خرچ ہوں گے۔ اس سے یہ بات واضح ہوتی ہے کہ یہ بھیک پاکستانی غیور عوام کے لئے بلکہ اپنے اللوں تللوں کے لئے مانگی جا رہی ہے، یعنی عوام نہیں حکمران بھیک منگے ہیں۔

Read Full Post | Make a Comment ( 1 so far )

اور جیب کٹ گئی!

Posted on 10/11/2008. Filed under: متفرق |

ایک اخباری خبر کے مطابق رکن قومی اسمبلی اعجاز جاکھرانی وزارت صحت کا قلمدان سنبھالنے اور حلف اٹھانے کے بعد اسلام آباد سے واپس کراچی ائرپورٹ پر پہنچے تو ائرپورٹ پر ان کے استقبال کے لئے پی پی کے کارکنان کی ایک کثیر تعداد موجود تھی، جنہوں نے جاکھرانی صاحب کو ہار پہنائے، گلے ملے، مبارکبادیں دیں، اس دوران وفاقی وزیر کو احساس ہوا کہ ان کی جیب پر کسی جیالے نے ہاتھ صاف کر دیا ہے، انہوں نے چیک کیا تو ان کی جیب سے گیارہ ہزار نقد، اے ٹی ایم کارڈ اور قومی اسمبلی کا کارڈ غائب تھا۔ جس کے بعد انہوں نے بذریعہ فون تھانے میں اس واقعہ کی انٹری کرا دی۔

Read Full Post | Make a Comment ( 2 so far )

« پچھلی تحاریر

Liked it here?
Why not try sites on the blogroll...