سیاست

ریڈیو این آر او

Posted on 27/12/2009. Filed under: سیاست | ٹيگز:, |



لنک روزنامہ جنگ

Advertisements
Read Full Post | Make a Comment ( 1 so far )

زندہ ہے بھٹو زندہ ہے!

Posted on 07/12/2009. Filed under: سیاست | ٹيگز:, , |

آج صبح اپنی بیٹی سارہ کو سکول چھوڑنے جا رہا تھا تو راستے میں لگے ایک بینر پر نظر پر گئی۔ جس پر لکھا تھا۔
‘‘ زندہ ہے بھٹو زندہ ہے، زرداری کی شکل میں زندہ ہے‘‘
اسے پڑھنے کے بعد مجھے تو ایسا لگا جیسے خود پیپلز پارٹی والے بھٹو کو گالی دے رہے ہوں۔
کہاں اسلامی سربراہی کانفرنس اور کہاں سرئے محل
کہاں شملہ معاہدہ اور کہاں کیری لوگر بل
کہاں بھٹو کے کارنامے اور کہاں آج کل کی کرپشن کہانیاں
ہو سکتا ہے میں غلط ہوں، ویسے آپ کا اس بارے میں کیا خیال ہے۔

Read Full Post | Make a Comment ( 5 so far )

کرپشن کرنا ہمارا حق ہے … پی پی پی منسٹر

Posted on 05/12/2009. Filed under: سیاست | ٹيگز:, , , , |

Read Full Post | Make a Comment ( 5 so far )

آصف زرداری جرائم پیشہ اور دھوکے باز ہیں ۔۔۔ مشرف کے الزامات

Posted on 09/11/2009. Filed under: سیاست | ٹيگز:, , , , , , , , , , , , |

روزنامہ جنگ کے مطابق سابق صدر جنرل پرویز مشرف نے صدر زرداری کے بارے میں پہلی بار سخت لہجہ اختیار کیا ہے۔ مشرف نے معروف صحافی سیمورہرش کو انٹرویو دیتے ہوئے کہا ہے کہ آصف زرداری ایک جرائم پیشہ اور دھوکے باز ہے۔
ہرش نے پاکستان کے بارے میں اپنی تفصیلی رپورٹ میں لکھا کہ ”مشرف نے اپنے جاں نشین کو نہیں بخشا۔ آصف زرداری ایک جرائم پیشہ اور دھوکے باز ہے۔ اپنے بچاؤ کیلئے کچھ بھی کرسکتا ہے۔ وہ محب وطن ہے نہ پاکستان سے اس کو کوئی لگاؤ ہے۔ وہ ایک معمولی انسان ہے“۔مشرف نے کہا کہ میں اور جنرل کیانی اب بھی فون پر رابطہ رکھے ہوئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ میرا نہیں خیال کہ فوج میں بغاوت ہوجائے۔ انہوں نے کہا کہ فوج میں بنیاد پرستانہ نظریات رکھنے والے ضرور موجود ہیں لیکن میرا نہیں خیال کہ ان کا منظم ہوکر بغاوت کا کوئی امکان بھی ہو۔ یہ بنیاد پرست ناپسند کئے جاتے ہیں اور ان کی کوئی مقبولیت حاصل نہیں ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ مسلمان اوباما سے بہت زیادہ توقعات رکھتے ہیں۔ ان کو اپنی مقبولیت کا فائدہ اٹھانا چاہئے۔ حتیٰ کہ طالبان کے ساتھ سیاسی ڈیل کرنے کی کوشش بھی کرنی چاہئے۔مشرف نے فوج میں ماضی میں ہونے والی بنیاد پرستانہ بغاوت کی کوششوں کا ذکر کرتے ہوئے بتایا کہ دونوں کوششوں میں ملوث افسروں کو پکڑ کر سزا دی گئی۔ میں نے سٹریٹجک اثاثوں کے تحفظ کیلئے 18 سے 20ہزار افراد پر مشتمل مضبوط سٹریٹجک فورس قائم کی ہے۔انہوں نے کہا کہ ان کے کردار اور امکانی طور پر بنیاد پرست ہونے کے حوالے سے ان کی مانیٹرنگ کی جاتی ہے‘ تاہم انہوں نے تسلیم کیا کہ میری رخصتی کے بعد سے بہت کچھ تبدیل ہوگیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ لوگ طالبان اور ان کے اقدامات کے بارے میں چوکنے ہوگئے ہیں۔ اب ہر شخص چوکنا ہے۔ہرش نے لکھا کہ مشرف ہائیڈ پارک کے قریب لندن میں اپنی اہلیہ کے ساتھ جلاوطنی کی سادہ زندگی گزار رہے ہیں۔ ان کے ساتھ رابطہ رکھنے والے حکام نے بتایا کہ بہت سی غلطیوں کے ساتھ ساتھ ان میں ایک نقص یہ بھی ہے کہ بہت زیادہ صاف گو ہیں۔ ہماری بات چیت سے قبل میں (ہرش) نے پوچھا کہ آپ نے گزشتہ جنوری میں واشنگٹن کے دورے کے موقع پر اوباما انتظامیہ کے کسی سینئر عہدیدار سے ملاقات کیوں نہ کی تو انہوں نے کہا کہ میں نے ملاقات کیلئے اس لئے نہیں کہا کہیں انکار نہ ہوجائے۔ایک اور موقع پر عام ڈھیلے ڈھالے اورا سپورٹس شرٹ میں ملبوس مشرف نے کہا کہ میں 2005ء میں شروع ہونے والے امریکی ڈرون حملوں سے بڑا پریشان تھا۔ میں نے امریکیوں سے پریڈیٹر کا مطالبہ کیا لیکن انہوں نے انکار کردیا۔ میں نے امریکیوں سے کہا کہ پھر اب کم از کم عوام کے سامنے یہ ضرور کہہ دیں کہ آپ ہمیں پریڈیٹر دے رہے ہیں۔ آپ ان پر حملے کرتے رہیں لیکن پی اے ایف کو ان کی نشاندہی کی ذمہ داری دیں لیکن اس سے بھی انکار کردیا گیا۔

Read Full Post | Make a Comment ( 5 so far )

کشمالہ طارق اور فردوس عاشق کل تک میں

Posted on 17/09/2009. Filed under: وڈیو زون, سیاست | ٹيگز:, , , , , , , , , , |

Read Full Post | Make a Comment ( None so far )

اُستاد حامد علی خان بمقابلہ اُستاد پرویز مشرف علی خان

Posted on 10/08/2009. Filed under: موبائیل زون, وڈیو زون, پاکستان, سیاست, طنز و مزاح | ٹيگز:, , |

Read Full Post | Make a Comment ( 3 so far )

لوگو سوچو!

Posted on 09/08/2009. Filed under: پاکستان, سیاست | ٹيگز:, , , , , , , , , , , , , , , , , , |

کافی دنوں بعد آپ سے مخاطب ہوں اس لئے آج کرنے کو بہت سی باتیں ہیں، کچھ ہوں گی بھی سہی، ہو سکتا ہے ان میں ربط نظر نہ آئے کیونکہ آجکل کے حالات نے میرے ذہن کو ماؤف سا کر دیا ہے۔ میں کسی ڈرامے یا فلم میں بھی ظلم یا دھوکہ ہوتا دیکھوں تو ٹی وی بند کر دیتا ہوں یا اٹھ کر باہر چلا جاتا ہوں جبکہ حقیقی زندگی میں پورا ملک ظلم اور فریب کی منڈی دکھائی دیتا ہے، ایسے حالات میں باتوں کے اندر ربط کیسے باقی رہ سکتا ہے۔ میرا بس چلے تو ان ظالموں، فریب کاروں اور بہروپیوں کی دھجیاں اڑا دوں، ان کا ریشہ ریشہ علحیدہ کر دوں، جھوٹ اور استحصال کی ہر علامت کو عبرت کی ایسی مثال بنا دوں کہ سالہا سال کسی کو آدم خوری کی جرآت نہ ہو، ان کے ساتھ اس سے بھی بدتر سلوک کروں جو بنوعباس نے بنواُمیہ کے ساتھ کیا تھا۔
قسم اللہ کی بزرگی و برتری کی، قسم پاکستان اور پاکستانیوں کی محرومیوں اور بدنصیبیوں کی اس قوم کے حکمران ‘ایک نمبر‘ ہوں تو اس جیسی ایک نمبر قوم پوری دنیا میں نہیں مگر مغرب سے مرعوب زدہ ہمارے یہ روبوٹس نما حکمران اس ملک کو مقروض منڈی کے طور پر چلا رہے ہیں۔ ان کا زیادہ سے زیادہ فخر صرف یہی ہے کہ ‘آئی ایم ایف راضی ہو گیا‘ اور ‘ہم قرضہ لے آئے ہیں‘ یا ہم قرضے کی قسط جاری کرانے میں کامیاب ہو گئے ہیں، ہم نے آئی ایم ایف کو رجھا لیا ہے ۔۔۔۔۔لیکن قوم کو کبھی نہیں بتائیں گے کہ یہ سب کس قیمت پر کیا ہے۔
قوموں اور ملکوں کو نہ ایٹم بم بچاتے ہیں نہ ان کی میعشت۔
ملک ایٹم بموں سے بچائے جا سکتے تو روس ٹکڑے ٹکڑے نہ ہوتا۔
ملک معاشی مضبوطی سے مضبوط ہوتے تو برونائی اور سعودی عرب مضبوط ترین ہوتے۔
قوموں کی حفاظت ۔۔۔ خود قومیں کرتی ہیں جیسے کسی بھی گھر کا آخری اور حقیقی محافظ چوکیدار نہیں ۔۔۔ اہل خانہ ہی ہوتے ہیں، اُسی طرح ملکوں کے محافظ اس کے عوام ہوتے ہیں، یہ صرف اسی صورت ممکن ہے جب عوام کو اقتدار میں شرکت اور عزت دی جائے، اہمیت دی جائے، انصاف دیا جائے ۔۔۔ لیکن یہاں کیا ہے؟
پیپلز پارٹی کے وڈیرے اور جاگیردار، مسلم لیگ کے سرمایہ دار
لوگو سوچو!
کیا یہ تمھارے بارے میں کبھی کچھ سوچ سکتے ہیں؟

Read Full Post | Make a Comment ( None so far )

سرائیکی کارڈ

Posted on 05/07/2009. Filed under: پاکستان, سیاست, سرائیکی وسیب | ٹيگز:, , , , , , |

لنک

لنک

Read Full Post | Make a Comment ( 7 so far )

میری ناکام ریاست کو فنڈ دینا بند کرو

Posted on 29/04/2009. Filed under: پاکستان, سیاست | ٹيگز:, , , , , , , , , , , , |

سابق وزیراعظم محترمہ بے نظیر بھٹو شہید کی بھتیجی فاطمہ بھٹو نے daily beast میں لکھے ایک مضمون میں کہا ہے کہ ہمیں امداد کے طور پر اربوں ڈالر تو موصول ہوئے مگر پاکستان کو محفوظ بنانے میں کامیابی حاصل نہ ہوئی، یہی وجہ ہے کہ ملک میں طالبان کی ایک اور قسم وجود میں آئی جو تجارتی راہداریوں کو بموں سے اڑانے اور نوجوان لڑکیوں کو کوڑے مارنے جیسی تخریبی اور گھناؤنی سرگرمیوں میں مصروف ہیں۔ سر سبز وادی سوات میں انتہا پسند طالبان سے دو سال مقابلہ کرنے کے بعد صدر زرداری نے آخر کار ان کے سامنے گھٹنے ٹیک دیئے اور نفاذ شریعت کی اجازت دے دی۔ طالبان کے خواب کو قانونی منظوری ملنے کے ایک ہفتے بعد ہی طالبان انتہائی سرعت کے ساتھ ضلع بونیر میں داخل ہو گئے جو وفاقی دارالحکومت سے صرف ٧٠ میل کے فاصلے پر ہے۔
اس مضمون میں فاطمہ بھٹو صدر زارداری اور امریکی صدر بارک اوباما کے درمیان آئندہ ہونے والی ملاقات کے بارے میں لکھتی ہیں کہ اس ملاقات میں صدر زرداری اپنے کشکول میں مزید چندہ ڈالے جانے کے علاوہ اور کوئی سوال نہیں کریں گے۔ وہ اوباما پر صرف اتنا واضح کریں گے کہ پاکستان کو طالبان اور انتہاپسندوں سے مقابلہ کرنے کے لئے مزید فنڈ کی ضرورت ہے۔
سابق صدر جارج ڈبلیو بش نے دہشت گردی سے مقابلہ کے لئے پاکستان کو دس ملین ڈالر دیئے جو ضائع گئے یا پھر بڑی جیبوں میں چلے گئے۔ ٹوکیو اجلاس کے بارے میں لکھتی ہیں کہ ٹوکیو اجلاس میں تیس ممالک کے نمائندے شریک ہوئے اور دہشتگردی سے مقابلہ کے لئے پاکستان کو پانچ بلین ڈالر فراہم کرنے کا عہد کیا۔ اس کے ساتھ آئی ایم ایف نے بھی پاکستان کو ٧۔٦ بلین ڈالر رعائتی پیکیج کے طور پر فراہم کیا ہے، سعودی عرب نے فراخدلی کا مظاہرہ کرتے ہوئے آئندہ چار برسوں میں ٧٠٠ ملین ڈالر دینے کا وعدہ کیا تو یورپی یونین نے بھی اسی مدت کے دوران اضافی ٦٤٠ ملین ڈالر عطا کرنے کا عہد کیا، علاوہ ازیں صدر اوباما نے سالانہ ١۔٥ بلین ڈالر دینے کا وعدہ کیا ہے اگرچہ وائٹ ہاؤس نے وضاعت کہ ہے کہ یہ سلسلہ جاری رہنا اس کے نتائج پر منحصر ہے۔
فاطمہ بھٹو نے اس مضمون کے آخر میں وضاعت کی ہے کہ اتنی بڑی بڑی رقومات صدر زرداری کی جھولی میں ڈالنا حماقت کے سوا کچھ نہیں کیونکہ صدارت کا عہدہ سنبھالنے سے قبل سوئزرلینڈ، انگلینڈ اور اسپین میں ان کے خلاف کرپشن کے معاملات درج تھے۔
فاطمہ بھٹو نے آصف زرداری اور مقتول سابق وزیراعظم بے نظیر بھٹو پر پاکستانی خزانے سے تین بلین ڈالر سے زائد اڑانے کا الزام عائد کیا ہے وہ لکھتی ہیں کہ زرداری اسے چھپانے میں ناکام رہے کیونکہ صدر بننے سے قبل انہوں نے اپنی ملکیت میں ایک بلین ڈالر زائد کے اثاثہ جات کا اعلان کیا۔
فاطمہ بھٹو نے کہا ہے کہ پاکستان کو مزید فنڈ کی فراہمی خطرناک ہو گی، اس کی شکم سیری نامکمن ہے بدعنوان حکومت کو جس قدر بھی فنڈ فراہم کیا جائے کم ہے۔ یہ رقومات پاکستان کو دہشتگردی سے نجات دلانے میں معاون ثابت نہیں سکتیں کہ دنیا کو جن انتہا پسندوں سے نجات دلانے کے لئے رقومات مقصود ہیں انہی کو تقویت بخشنے کے لئے فنڈز کا استعمال ہو رہا ہے۔

Read Full Post | Make a Comment ( 2 so far )

نذیر ناجی فلیٹ سیکنڈل

Posted on 24/04/2009. Filed under: سیاست | ٹيگز:, , , , , , |

نیچے والی دونوں آڈیو آپ سن سکتے ہیں مگر اکیلے میں کیونکہ ان میں لفظوں کا بہت بُری طرح استعمال کیا گیا ہے۔

سیکندل 02
سیکنڈل 03

Read Full Post | Make a Comment ( None so far )

« پچھلی تحاریر

Liked it here?
Why not try sites on the blogroll...