میرے پرندے میرے بچے

Posted on 18/07/2009. Filed under: شعروادب | ٹيگز:, , , , , , , , , |

میرے ننھے گھر کے اندر
اک ننھا سا پیڑ لگا ہے
پیڑ کا سایہ تھوڑا ہے پر بہت گھنا ہے
کچھ دن پہلے، نیلے پیلے لال پروں والی دو چڑیاں
نازک نازک گھاس کے تنکے ڈھونڈ کے لائیں
اک گھر کی بنیاد بنا کر گھونسلا اک ننھا سا بنا کر
چڑیا دن بھر بیٹھی رہتی اور چڑا محنت سے دن بھر دانہ لاتا
چڑیا کے دو بچوں کی آوازیں سن کر
میں اور میرا ساتھی دونوں خوش ہو گئے
گھونسلے کو آفت سے بچاتے
آج صبح وہ دونوں چڑیاں بچے لیکر
گھونسلا چھوڑ کے چلی گئی ہیں
ہم دونوں خاموش کھڑے ہیں
اک دوجے کو دیکھ رہے ہیں سوچ رہے ہیں
ہم دونوں جب بوڑھے ہوں گے
بچے اپنے ہی اس گھر کے کمرے میں
ایک نئے ننھے گھر کی بنیاد رکھیں گے
اور پھر ان چڑیوں کی مانند
اپنے بچے لے جائیں گے
گھر کو سونا کر جائیں گے
میں اور میرا ساتھی اس دن مر جائیں گے
اک ننھے سے گھر کے اندر ایک اور ننھے گھر کا منظر
کتنا پیارا لگتا ہے
لیکن جب اس گھر کے باسی اور کسی منزل کی جانب اڑ جائیں
تب گھر ویرانہ لگتا ہے
دل بھی رونے لگتا ہے
گھر بھی رونے لگتا ہے
عظمٰی گوہر

Read Full Post | Make a Comment ( 3 so far )

Liked it here?
Why not try sites on the blogroll...