تمھیں کیا خبر

Posted on 22/04/2009. Filed under: شعروادب | ٹيگز:, , , , , , , , |

راتوں کو اٹھ کر، خیالوں سے ہو کر، یادوں میں کھو کر، تمھیں کیا خبر
اپنے خدا سے ۔۔۔۔۔۔!
میں کیا مانگتا ہوں، ویرانوں میں جا کر، دکھڑے سنا کر، دامن پھیلا کر
آنسو بہا کر، تمھیں کیا خبر
اپنے خدا سے میں کیا مانگتا ہوں
تم کہو گے، صنم مانگتا ہوں، زر مانگتا ہوں
میں گھر مانگتا ہوں، زمیں مانگتا ہوں، نگیں مانگتا ہوں ۔۔۔!
تم تو کہو گے، ہم کو خبر ہے کہ راتوں کو اٹھ کر، خیالوں سے ہو کر
یادوں میں کھو کر، آنکھیں بھگو کر، کسی دلربا کی، کسی دلنشیں کی
وفا مانگتا ہوں، یہ بھی غلط ہے، وہ بھی غلط ہے، جو بھی ہے سوچا
سو بھی غلط ہے، نہ صنم مانگتا ہوں، نہ زر مانگتا ہوں
نہ دلربا کی، نہ دلنشیں کی، نہ ماہ جبیں کی وفا مانگتا ہوں
تمھیں کیا خبر ۔۔۔ اپنے خدا سے کیا مانگتا ہوں
میں اپنے خدا سے
آدم کے بیٹے کی آنکھوں سے جاتی ۔۔۔۔ حیا مانگتا ہوں
حوا کی بیٹی کے سر سے اترتی ۔۔۔۔۔ ردا مانگتا ہوں
اس کڑے وقت میں ۔۔۔۔ پاک وطن کی بقا مانگتا ہوں
تمھیں کیا خبر، میں کیا ماگتا ہوں

Read Full Post | Make a Comment ( 1 so far )

Liked it here?
Why not try sites on the blogroll...