آصف زرداری جرائم پیشہ اور دھوکے باز ہیں ۔۔۔ مشرف کے الزامات

Posted on 09/11/2009. Filed under: سیاست | ٹيگز:, , , , , , , , , , , , |

روزنامہ جنگ کے مطابق سابق صدر جنرل پرویز مشرف نے صدر زرداری کے بارے میں پہلی بار سخت لہجہ اختیار کیا ہے۔ مشرف نے معروف صحافی سیمورہرش کو انٹرویو دیتے ہوئے کہا ہے کہ آصف زرداری ایک جرائم پیشہ اور دھوکے باز ہے۔
ہرش نے پاکستان کے بارے میں اپنی تفصیلی رپورٹ میں لکھا کہ ”مشرف نے اپنے جاں نشین کو نہیں بخشا۔ آصف زرداری ایک جرائم پیشہ اور دھوکے باز ہے۔ اپنے بچاؤ کیلئے کچھ بھی کرسکتا ہے۔ وہ محب وطن ہے نہ پاکستان سے اس کو کوئی لگاؤ ہے۔ وہ ایک معمولی انسان ہے“۔مشرف نے کہا کہ میں اور جنرل کیانی اب بھی فون پر رابطہ رکھے ہوئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ میرا نہیں خیال کہ فوج میں بغاوت ہوجائے۔ انہوں نے کہا کہ فوج میں بنیاد پرستانہ نظریات رکھنے والے ضرور موجود ہیں لیکن میرا نہیں خیال کہ ان کا منظم ہوکر بغاوت کا کوئی امکان بھی ہو۔ یہ بنیاد پرست ناپسند کئے جاتے ہیں اور ان کی کوئی مقبولیت حاصل نہیں ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ مسلمان اوباما سے بہت زیادہ توقعات رکھتے ہیں۔ ان کو اپنی مقبولیت کا فائدہ اٹھانا چاہئے۔ حتیٰ کہ طالبان کے ساتھ سیاسی ڈیل کرنے کی کوشش بھی کرنی چاہئے۔مشرف نے فوج میں ماضی میں ہونے والی بنیاد پرستانہ بغاوت کی کوششوں کا ذکر کرتے ہوئے بتایا کہ دونوں کوششوں میں ملوث افسروں کو پکڑ کر سزا دی گئی۔ میں نے سٹریٹجک اثاثوں کے تحفظ کیلئے 18 سے 20ہزار افراد پر مشتمل مضبوط سٹریٹجک فورس قائم کی ہے۔انہوں نے کہا کہ ان کے کردار اور امکانی طور پر بنیاد پرست ہونے کے حوالے سے ان کی مانیٹرنگ کی جاتی ہے‘ تاہم انہوں نے تسلیم کیا کہ میری رخصتی کے بعد سے بہت کچھ تبدیل ہوگیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ لوگ طالبان اور ان کے اقدامات کے بارے میں چوکنے ہوگئے ہیں۔ اب ہر شخص چوکنا ہے۔ہرش نے لکھا کہ مشرف ہائیڈ پارک کے قریب لندن میں اپنی اہلیہ کے ساتھ جلاوطنی کی سادہ زندگی گزار رہے ہیں۔ ان کے ساتھ رابطہ رکھنے والے حکام نے بتایا کہ بہت سی غلطیوں کے ساتھ ساتھ ان میں ایک نقص یہ بھی ہے کہ بہت زیادہ صاف گو ہیں۔ ہماری بات چیت سے قبل میں (ہرش) نے پوچھا کہ آپ نے گزشتہ جنوری میں واشنگٹن کے دورے کے موقع پر اوباما انتظامیہ کے کسی سینئر عہدیدار سے ملاقات کیوں نہ کی تو انہوں نے کہا کہ میں نے ملاقات کیلئے اس لئے نہیں کہا کہیں انکار نہ ہوجائے۔ایک اور موقع پر عام ڈھیلے ڈھالے اورا سپورٹس شرٹ میں ملبوس مشرف نے کہا کہ میں 2005ء میں شروع ہونے والے امریکی ڈرون حملوں سے بڑا پریشان تھا۔ میں نے امریکیوں سے پریڈیٹر کا مطالبہ کیا لیکن انہوں نے انکار کردیا۔ میں نے امریکیوں سے کہا کہ پھر اب کم از کم عوام کے سامنے یہ ضرور کہہ دیں کہ آپ ہمیں پریڈیٹر دے رہے ہیں۔ آپ ان پر حملے کرتے رہیں لیکن پی اے ایف کو ان کی نشاندہی کی ذمہ داری دیں لیکن اس سے بھی انکار کردیا گیا۔

Read Full Post | Make a Comment ( 5 so far )

Liked it here?
Why not try sites on the blogroll...